Tickerاخبارسوشل میڈیا

یونیورسٹی میں پروپوزل کا واقعہ، دونوں طلبہ کی برطرفی کا لیٹر سوشل میڈیا پر وائرل

لاہور: نجی یونیورسٹی میں لڑکی اور لڑکے کو کھلے عام ایک دوسرے کو شادی کےلیے پروپوز کرنا مہنگا پڑ گیا جب کہ اس واقعے کی ویڈیو وائرل ہونے پر انتظامیہ نے دونوں کو  یونیورسٹی سے نکال دیا۔

  نجی یونیورسٹی میں لڑکی اور لڑکے نے اپنے ساتھیوں کے سامنے ایک دوسرے کو شادی کےلیے پروپوز کیا ، لڑکی نے لڑکے کو پھول پیش کیے اور شادی کی پیشکش کی۔

لڑکے نے خوشی خوشی پیشکش قبول کی اور اس  موقع پر موجود ساتھی طلبہ تصویریں بناتے رہے، پروپوزل قبول ہونے پر طلبہ نے خوشی سے نعرے لگائے۔

اس حوالے سے جاری نو ٹیفکیشن کےمطابق یونیورسٹی انتظامیہ نے لڑکی اورلڑکے سے جواب طلبی کی مگر وہ پیش نہ ہوئے  جس کے بعد انتظامیہ نے یک طرفہ کارروائی کرتے ہوئے دونوں کو یونیورسٹی سے نکال دیا۔

بعدازاں سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے اس معاملے پر ملے جلے ردعمل کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

ایک صارف نے سخت لہجہ اپناتے ہوئے کہا کہ ’نکاح کرتے تو ہم حوصلہ افزائی کرتے، اب سستے انگریز بنو گے تو ذلیل تو ہو گے‘۔

ایک صارف نے لکھا کہ ’یہی وجہ ہے مولانا صاحب نے مخلوط تعلیم کو غیر اخلاقی ٹھہرایا۔

فاطمہ خلیل کہتی ہیں کہ ’اس طرح کے لوگوں کی وجہ سے بہت سی لڑکیاں تعلیم حاصل کرنے سے محروم رہ جاتی ہیں‘۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button