Tickerسائنس و ٹیکنالوجی

کوروناکی چوتھی لہر، طبی ماہرین کے انکشاف نے خوف وہراس پھیلا دیا نئی پریشانی لاحق

کراچی (ویب ڈیسک) پاکستان میں کورونا وائرس کی چوتھی لہر کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے ، جس کے باعث طبی ماہرین کو نئی پریشانی لاحق ہوگئی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر سجاد قیصر نے خبردار کیا ہے کہ وائرس کی نئی اقسام سامنے آنے کی وجہ سے کورونا کی چوتھی لہر خطرناک ہو سکتی ہے
تاہم عوام تاحال کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کرتی نظر نہیں آتی۔میئڈیا رپورٹ کے مطابق حکومت کی جانب سے کورونا پابندیوں میں نرمی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے عوام نے احتیاطی تدابیر کو مکمل طور پر نظر انداز کر دیا ، پابندیوں میں نرمی کے بعد ایک جانب تو شہر میں معمولات زندگی بحال ہو گئے ہیں اور بڑے پیمانے پر لوگوں کو روزگار کے مواقع حاصل ہو رہے ہیں تاہم ان پابندیوں میں نرمی کے لیے حکومت نے یہ ہدایات جاری کی تھیں کہ عوام فوری ویکسی نیشن کرائیں گے اور ایس او پیز کی پابندی کریں گے لیکن عوام نے نرمی کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے ان ایس او پیزکی دھجیاں اڑا دی ہیں۔بتایا گیا ہے کہ عوامی مقامات ہوں یا بازار مارکیٹیں یا مساجد ، کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد نظر نہیں آ رہا ، کورونا پابندیوں میں نرمی کے بعد معمولات زندگی کا جائزہ لیں تو دیکھنے میں آیا کہ بیشتر علاقوں میں عوامی مقامات ، کاروباری مراکز ، بازاروں ، مارکیٹوں اور رہائشی علاقوں میں کورونا ایس او پیز پر عوام عمل درآمد کرتے ہوئے نظر نہیں آ رہے ہیں ، شہریوں کی بڑی تعداد نے ماسک کا استعمال کم کر دیا ہے جن مقامات پر سینی ٹائزر گیٹ نصب کیے گئے تھے یا تو وہ ہٹا دیے گئے ہیں یا ان میں سے بیشتر غیر فعال ہوگئے ہیں ، ماسک کا استعمال صرف سرکاری اور نجی دفاتر کے علاوہ بڑے مالز ، ریسٹورنٹس ، ہسپتالوں اور دیگر اداروں میں کیا جا رہا ہے تاہم عام علاقوں میں شہری ماسک یا کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کرتے نظر نہیں آتے۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button