Tickerآج کا ایشو

سابق وزیر خزانہ کی وفاقی حکومت پر کڑی تنقید

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار وفاقی حکومت کی معاشی پالیسیوں پر پھٹ پڑے۔انھوںنے کہا ہے کہ تحریک انصاف حکومت نے آئی ایم ایف کے ساتھ انتہائی ناقص پروگرام کیے۔شرح سود میں اضافہ اورکرنسی کی قدر میں کمی کرکے سب سے بڑی غلطی کی گئی۔آئی ایم ایف پروگرام بحال ہوتا ہوا دکھائی نہیں دے رہا۔انھوںنےکہا کہ میں نے اپنے ریٹرنز فائل کرنے میںکبھی 20منٹ بھی نہیں لگائے تھے۔ مجھ پرالزامات لگانے والوں کو جیلوں میں ہونا چاہیے۔ اگر وزیر خزانہ اپنے ریٹرنز فائل نہ کرے تو اسے پھانسی دے دی جائے۔مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما کا مزید کہناتھا ک مہنگائی
کا دبائو جلد ختم ہونے کا کوئی بھی امکان نہیں ہے۔کیوںکہ حکومت رواں مالی سال میں جی آئی ڈی سی کی مد میں 130 ارب روپے اور 610 ارب روپے پٹرولیم لیوی کی مد میں جمع کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے اپنے دور کی بات کی اور کہا کہ مسلم لیگ ن کے پانچ سالہ دور حکومت میں ہر سال گردشی قرضوں میں 110 ارب روپے اضافہ ہوا، بجلی ٹیرف میں اضافے کے باوجود گردشی قرضہ گزشتہ تین برس میں ہر سال 400 ارب روپے بڑھا ہے۔ پی ٹی آئی کی معیشت کے ہر محاذ پر کارکردگی افسوسناک رہی اور یہی وجہ ہے کہ ان غلط پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی کا دباؤ بڑھ رہا ہے۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button