ایتھلیٹ کارنر

ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں بھارت کو ہرائیں اور بلینک چیک لے جائیں، بڑی کاروباری شخصیت کی پی سی بی کو پیشکش

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین رمیز راجہ نے اس بات کا اعادہ کیا ہے کہ ایک ترقی پذیر کرکٹ معیشت ملک میں وقت کی ضرورت ہے۔ انہوں نے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے بین الصوبائی رابطہ (آئی پی سی)
کے ساتھ ایک اجلاس میں فنڈنگ ​​کے لیے بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) پر انحصار کرنے کے بجائے خود کفیل ہونے کی

اہمیت پر زور دیا۔رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ پی سی بی آئی سی سی کی فنڈنگ ​​پر اپنے 50 فیصد چلاتا ہے۔ آئی سی سی کو 90 فیصد فنڈنگ ​​بھارت سے ملتی ہے۔ مجھے ڈر ہے کہ اگر بھارت نے آئی سی سی کو فنڈنگ ​​روک دی تو پی سی بی ٹوٹ سکتا ہے کیونکہ پی سی بی آئی سی سی کو صفر فیصد فنڈنگ ​​دیتا ہے۔ میں پاکستان کرکٹ کو مضبوط بنانے کے لیے پرعزم ہوں۔انہوں نے مزید کہا کہ ایک سرمایہ کار نے مجھے آفر کی ہے کہ اگر پاکستان آئندہ ٹی 20 ورلڈ کپ میں بھارت کو ہرا دیتا ہے تو پی سی بی کے لیے بلینک چیک تیار ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر ہمیں مضبوط مالی مدد حاصل ہوجائے تو دنیا کی کوئی ٹیم پاکستان کے دورے سے انکار نہیں کرے گی۔ رمیز راجہ کا مزید کہنا تھا کہ اگر ہماری کرکٹ کی معیشت مضبوط ہو جائے تو انگلینڈ یا نیوزی لینڈ سمیت کوئی اور ہمارا استعمال نہیں کرسکے گا ، بہترین کرکٹ ٹیم اور بہترین کرکٹ معیشت دو بڑے چیلنجز ہیں۔ رمیز راجہ نے ڈومیسٹک کرکٹرز کے لیے بہتر تنخواہوں کے بارے میں بھی بات کی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ڈومیسٹک کرکٹرز کی تنخواہوں میں لاکھوں روپے کا اضافہ کیا ہے کیونکہ ہم اس بات کو یقینی بنانا چاہتے ہیں کہ وہ ہر سال کم از کم 40 لاکھ روپے کمائیں۔ پی سی بی اس سلسلے میں سپانسرز کی بھی تلاش کر رہا ہے۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button