Tickerسوشل میڈیا

ہمیں روزانہ اس کام پر مجبور کیا جاتا ہے، مشہور کمپنی کی خواتین ملازمائیں ایسی شکایات لے کر آگئیں کہ سننے والے کانوں کو ہاتھ لگائیں گے

نومبر 21, 2021 | 7:25 شام

 

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) الیکٹرک گاڑیاں بنانے والی معروف امریکی کمپنی ٹیسلا کی مرکزی فیکٹری میں خواتین کو

 

جنسی ہراسگی کا نشانہ بنائے جانے کا انکشاف سامنے آ گیا۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق کمپنی میں کام کرنے والی 38سالہ جیسیکا بریزا اور دیگر سابق ملازمین نے بتایا ہے کہ دوران ملازمت انہیں فیکٹری میں لگ بھگ روزانہ جنسی ہراسگی کا سامنا کرنا پڑتا تھا اور جب وہ سپروائزرز سے اس کی شکایت کرتی تھیں تو وہ شکایت سننا بھی گوارا نہیں

 

کرتے تھے۔جیسیکا نے بتایا کہ ”میں نے فریمونٹ، کیلیفورنیا میں واقع ٹیسلا کی مرکزی فیکٹری میں تین سال تک کام کیا ہے اور ہر روز مرد ملازمین مجھ پرنازیبا فقرے کستے اور نامناسب انداز میں میرے جسم کو چھوتے تھے۔ میں نے کمپنی کے ہیومن ریسورسز ڈیپارٹمنٹ سے بھی اس حوالے سے شکایت کی لیکن انہوں نے کچھ نہیں کیا اور جب میں نے انہیں

 

دوسری ای میل کی تو انہوں نے میرا ای میل ایڈریس ہی ’ڈس ایبل‘ کر دیا۔“ ٹیسلا کی طرف سے اس حوالے سے تاحال کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button