Tickerسائنس و ٹیکنالوجی

ٹیلی گرام کا رواں سال واٹس ایپ سے ڈٹ کر مقابلہ

دسمبر 31, 2021 | 2:37 شام

 

بیجنگ (نیوز ڈیسک) مختصر ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک نے سال 2021ء میں سب سے زیادہ ڈاؤن لوڈ ہونے والی ایپلی

کیشن کا اعزاز اپنے نام کرلیا جبکہ واٹس ایپ کے متبادل کے طور پر سامنے آنے والی پیغام رسانی کی موبائل ایپلی کیشن ٹیلی گرام نے بھی حریف سے ڈٹ کر مقابلہ کیا۔موبائل ایپس پر نظر رکھنے والی غیر ملکی کمپنی نے سال 2021

 

کے دوران عالمی سطح پر سب سے زیادہ ڈاؤن لوڈ ہونے والی 10 موبائل اپیلی کیشنز کی فہرست جاری کردی۔فہرست کے مطابق فیس بک/ میٹا کی زیر ملکیت موبائل ایپلی کیشنز انسٹا گرام، واٹس ایپ، فیس بک اور میسنجر ٹاپ ٹین میں جگہ بنانے میں کامیاب رہیں۔ایپا ٹوپیا کی جاری کردہ فہرست کے مطابق ٹک ٹاک 65 کروڑ 60 لاکھ ڈاؤن لوڈز کے ساتھ

 

پہلے، انسٹاگرام 54 کروڑ 50 لاکھ کے ساتھ دوسرے، فیس بک 41 کروڑ 60 لاکھ کے ساتھ تیسرے، جبکہ واٹس ایپ 39 کروڑ 95 لاکھ ڈاؤن لوڈز کے ساتھ چوتھے نمبر پر رہا۔پانچویں نمبر پر اسنیپ چیٹ رہا جسے 32 کروڑ 70 لاکھ، زوم کو 30 کروڑ، فیس بک میسنجر کو 26 کروڑ 8 لاکھ ، کیپ کیٹ 25 کروڑ 50 لاکھ اور آڈیو میوزک پلیٹ فارم اسپاٹیفائی کو 20 کروڑ 30 لاکھ

 

صارفین نے ڈاؤن لوڈ کیا۔میٹا (فیس بک) کی زیر ملکیت ایپس کے حوالے سے بات کی جائے تو انسٹا گرام کو ایک سال کے دوران 54 کروڑ 50 لاکھ، فیس بک کو 41 کروڑ 60 لاکھ، واٹس ایپ کو 39 کروڑ 50 لاکھ بار ڈاؤن لوڈ کیا گیا جبکہ فیس بک میسنجر کو 26 کروڑ 80 لاکھ صارفین نے ڈاؤن لوڈ کیا۔ایپا ٹوپیا کی جاری کردہ فہرست کے مطابق ٹک ٹاک 65 کروڑ 60 لاکھ

ڈاؤن لوڈز کے ساتھ پہلے، انسٹاگرام 54 کروڑ 50 لاکھ کے ساتھ دوسرے، فیس بک 41 کروڑ 60 لاکھ کے ساتھ تیسرے، جبکہ واٹس ایپ 39 کروڑ 95 لاکھ ڈاؤن لوڈز کے ساتھ چوتھے نمبر پر رہا۔پانچویں نمبر پر اسنیپ چیٹ رہا جسے 32 کروڑ 70 لاکھ، زوم کو 30 کروڑ، فیس بک میسنجر کو 26 کروڑ 8 لاکھ ، کیپ کیٹ 25 کروڑ 50 لاکھ اور آڈیو میوزک پلیٹ فارم

 

اسپاٹیفائی کو 20 کروڑ 30 لاکھ صارفین نے ڈاؤن لوڈ کیا۔میٹا (فیس بک) کی زیر ملکیت ایپس کے حوالے سے بات کی جائے تو انسٹا گرام کو ایک سال کے دوران 54 کروڑ 50 لاکھ، فیس بک کو 41 کروڑ 60 لاکھ، واٹس ایپ کو 39 کروڑ 50 لاکھ بار ڈاؤن لوڈ کیا گیا جبکہ فیس بک میسنجر کو 26 کروڑ 80 لاکھ صارفین نے ڈاؤن لوڈ کیا۔واضح رہے کہ واٹس ایپ نے رواں

 

سال کے آغاز پر پرائیوسی پالیسی متعارف کرائی تھی جسے صارفین نے متنازع قرار دیتے ہوئے متبادل کے طور پر ٹیلی گرام، سگنل اور ترکی کی تیار کردہ موبائل ایپلی کیشن Bip کا استعمال شروع کردیا تھا، جس نے واٹس ایپ کو متنازع پالیسی واپس لینے پر مجبور کیا۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button