Tickerوومنزہ

غزالہ نے پلے کارڈ پھاڑ کر انگلی مروڑی، تھپڑ مارا، جھڑپ کے بعد پیپلزپارٹی کی شگفتہ جمانی کا موقف آگیا

جنوری 1, 2022 | 11:55 صبح

 

اسلام آباد (ویب ڈیسک) گزشتہ روز قومی اسمبلی میں احتجاج کے دوران پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن شگفتہ جمانی اور

حکمراں جماعت پاکستان تحریکِ انصاف کی رکن غزالہ سیفی کے درمیان ہونے والی جھڑپ کے حوالے سے شگفتہ جمانی کا ایک اور بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ غزالہ سیفی نے پلے کارڈ چھین کر پھاڑا، میری انگلی مروڑی اور تھپڑ مار دیا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شگفتہ جمانی نے کہا کہ کل دفن ہونے والے آرڈیننس

 

ہاؤس میں لے کر آئے تھے، ہم احتجاج کر رہے تھے، پلے کارڈز ہمارے ہاتھ میں تھے، غزالہ سیفی نے میرے ہاتھ سے پلے کارڈ چھین کر پھاڑ دیا، میں نے کہا کہ غزالہ بدتمیزی نہ کرو، جس پر انہوں نے میری انگلی مروڑ دی، پھر پلٹ کر واپس آئیں اور میرے منہ پر تھپڑ مار دیا۔شگفتہ جمانی نے کہا کہ سیاست میں زندگی گزر گئی، لیکن یہ حالات نہیں دیکھے کہ

 

عورتیں عورتوں کو ماریں۔یادرہے کہ گزشتہ روز قومی اسمبلی میں احتجاج کے دوران شگفتہ جمانی اور غزالہ سیفی کا ایک دوسرے کو مارنے کا معاملہ سامنے آیا تھا۔غزالہ سیفی نے بھی الزام عائد کیا تھا کہ شگفتہ جمانی نے ان کا ہاتھ مروڑا، جس سے انگلی فریکچر ہو گئی، ان کے خلاف پرچہ درج کرواؤں گی۔غزالہ سیفی کے الزام کے جواب میں شگفتہ

 

جمانی نے کہا تھا کہ حملہ پہلے غزالہ نے کیا، میں سینئر ہوں، کوئی ہاتھ لگائے گا تو جواب تو دینا پڑے گا۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button