fbpx
Tickerسوشل میڈیا

ایسوسی ایشن آف الیکٹرانک میڈیا ایڈیٹرز اینڈ نیوز ڈائریکٹر ز(ایمنڈ) کا گزشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ کے موقع پرملک کے مختلف شہروں میں صحافیوں کو تشدد کا نشانہ بنانے،میڈیا کی گاڑیوں اور دفتر پر حملوں پر شدید تشویش کا اظہار

مئی 26, 2022 | 2:04 شام

 

اسلام آ باد (نیوزڈیسک)ایسوسی ایشن آف الیکٹرانک میڈیا ایڈیٹرز اینڈ نیوز ڈائریکٹر ز(ایمںڈ) نے گزشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ

 

کے موقع پرملک کے مختلف شہروں میں صحافیوں کو تشدد کا نشانہ بنانے،میڈیا کی گاڑیوں اور دفتر پر حملوں پر شدید تشویش کا اظہار کیا اور اسکی سخت مذمت کی ہے،ایمنڈ کے مطابق گزشتہ روز پرتشدد واقعات اورتشویشناک حالات کے باوجود صحافیوں نے اپنے فرائض بخوبی انجام دیئےاورعوام کو دوطرفہ موقف اور تمام صورتحال سے آگاہ رکھا،ان فرائض کی ادائیگی کے دوران کراچی،لاہور،اسلام آباد اور دیگر مقامات پر تحریک انصاف کے

 

کارکنوں کی جانب سے نہ صرف رپورٹرز،کیمرامینوں اورفوٹو گرافروں پر تشدد کیا گیا انکے پیشہ وارانہ فرائض میں رکاوٹ ڈالی گئی بلکہ متعدد چینلز کی گاڑیوں اور ڈی ایس این جیز کو بھی توڑ پھوڑ کا نشانہ بنایا گیا،توڑ پھوڑ سےدنیا ٹی وی،ٹوئنٹٰی فورنیوز،سماء نیوزاورآج نیوز سمیت دیگر چینلز کی ڈی ایس این جیز کو شدید نقصان پہنچا،اسلام آباد میں پی ٹی آئی کے کارکنوں نے جیو نیوز کے دفتر پر حملہ کیا پتھراؤ کے نتیجے میں

 

عمارت کے شیشوں اور دیگر املاک کو نقصان پہنچا،ایمنڈ نے ان واقعات پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف سمیت تمام سیاسی جماعتوں سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے کارکنوں کے لیئے میڈیا ہاوسز اور ورکرزکو نقصان نہ پہنچانے کی واضح ہدایات جاری کریں ،میڈٰیا سے متعلق اشتعال انگیز گفتگو سے گریز کریں سیاسی معاملات اور مفادات کے لیئے میڈیا کو نشانہ نہ بنائیں اور اپنے پروگرامز کی کوریج کے لیئے ایسا

 

ماحول فراہم کریں جس میں پیشہ وارانہ فرائض احسن طریقے سے انجام دیئے جاسکیں،ایمنڈ نے حکومت سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ میڈیا ہاوس،صحافیوں اور میڈٰیا کی املاک پر حملہ کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائیں،ایمنڈ کا کہنا ہے کے پاکستانی میڈیا نا مساعد اور غیر محفوظ حالات کے باوجود عوام کو درست اطلاعات کی رسائی کے حق کے لیئے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button