fbpx
Tickerدلچسپ و عجیب

یہ صرف مردوں کا ادارہ نہیں۔۔۔کے الیکٹرک کا روشنی باجی پروگرام کیا ہے اور یہ کونسا اہم کام کرتا ہے؟

جون 21, 2022 | 12:38 شام

کراچی(نیوز ڈیسک)کے۔ الیکٹرک نام سنتے ہی ذہن میں آتا ہے کہ اس ادارے سے منسلک صرف مرد ہوں گے یہاں عام خواتین کا کیا کام لیکن ایسا

 

بالکل نہیں ہے۔ K.E نے ہنر فاؤنڈیشن کے اشتراک سے ایک شاندار پروجیکٹ روشنی باجی پروگرام شروع کیا ہے جس میں پسماندہ علاقوں کی لڑکیوں کو KE کے سفیر کے طور پر تیار کیا جاتا ہے تاکہ وہ ان علاقوں میں گھر گھر جاکر بجلی کے حفاظت کے ساتھ استعمال کے بارے میں انھیں آگاہی دیں۔ یہی نہیں ان لڑکیوں کو الیکٹریشئن کے کام بھی سکھائے جاتے ہیں تا کہ یہ لڑکیاں اپنے علاقے میں الیکٹریشئن کا کام بھی شروع کر سکیں اس

 

مقصد کے لئے KE کی جانب سے انھیں مکمل الیکٹریشئن کٹ بھی فراہم کی جاتی ہے تاکہ یہ لڑکیاں اپنے پیروں پر کھڑی ہو کر اپنے گھر والوں کی کفالت بھی کر سکیں۔ ان کا ٹارگٹ ہے کہ تقریباً ایک لاکھ لڑکیوں کو اس مقصد کے لئے تیار کیا جائے۔ ایک ٹریننگ batch میں 40 سے زیادہ لڑکیاں چنی جاتی ہیں۔ پہلے گروپ کی کامیاب ٹریننگ کے بعد اب دوسرا گروپ زیرِ ٹریننگ ہے۔ پہلے گروپ کی تقریبا 19 لڑکیاں اب KE کی ملازم ہیں

 

آرٹیکل سے متصل ویڈیو میں اس کی تفصیلات دکھائی گئی ہیں۔KE کی جانب سے 2021 میں روشنی باجی پروگرام شروع کیا گیا یہ پروگرام ایک ایوارڈ یافتہ خواتین کا سفیر پروگرام ہے جو کے ای اور اس کے صارفین کے درمیان رابطے کو بڑھانے کے لیے شروع کیا گیا ہے۔ ہماری نچلی برادریوں میں خواتین اور بچے ناقص آلات اور غیر محفوظ طریقے سے بجلی کے استعمال کی وجہ سے گھروں کے اندر بجلی کے کرنٹ کے واقعات

 

کا زیادہ شکار ہوتے ہیں، خواتین حفاظتی سفیر گھر گھر جا کر بجلی کی حفاظت کی اہمیت کے بارے میں لوگوں کو آگاہ کرتی ہیں۔ بجلی کے کنکشن کے ساتھ ساتھ بجلی کی بچت کے بارے میں تجاویز بھی فراہم کی جاتی ہیں۔ٹریننگ لینے والی خواتین کو سیکھنے کے لیے ایک محفوظ، آرام دہ ماحول فراہم کیا گیا ہے۔ روشنی باجی پروگرام خواتین کے توانائی کے شعبے میں رکاوٹوں کو توڑنے کی ایک زبردست مثال کے طور پر سامنے آیا ہے۔

 

Status Quo کو چیلنج کرنا:چیلنج کبھی بھی آسان نہیں ہوتا ہے۔ روشنی باجی پروگرام کو ایک مکمل بااختیار پروگرام کے طور پر ڈیزائن کیا گیا تھا جو اس میدان میں خواتین کو درپیش چیلنجوں کو مدنظر رکھتے ہوئے بنایا گیا ہے جہاں روشنی باجیوں کو ذاتی اور پیشہ ورانہ صلاحیتوں میں اضافے کے لیے وسیع تربیت فراہم کی جاتی ہے۔کون کون سی تربیت شامل ہیں :٭اعتماد پیدا کرنے اور مسائل کو حل کرنے کی صلاحیت کو بہتر بنانے کے

 

لیے ذاتی ترقی، تناؤ پر قابو، اور زندگی کی مہارتوں پر ورکشاپس۔٭بہتر مواصلاتی مہارت کی تربیت۔٭پاکستان میں خواتین کے لیے محفوظ پبلک ٹرانسپورٹ کی عدم موجودگی کی صورت میں نقل و حرکت کے لئے موٹر سائیکل سواری کی کلاسز۔٭اعتماد اور تحفظ کے احساس کو بڑھانے کے لیے خود دفاعی تربیت۔٭پاکستان کا پہلا خاتون سرٹیفائیڈ الیکٹریشن ٹریننگ پروگرامبجلی کے نظام کے بارے میں روشن باجی کے علم کو بڑھانے اور

 

ان کی مستقبل کی روزی کو محفوظ بنانے کے لیے پائلٹ گروپ کی 40 خواتین نے پاکستان کی پہلی خاتون سرٹیفائیڈ الیکٹریشن ٹریننگ پروگرام سے گریجویشن کیا۔یہ تربیت انہیں برقی یوٹیلیٹی کے میٹروں سے گھر کے ڈسٹری بیوشن بورڈ تک 5kW تک کے سنگل فیز سپلائی پر مکمل اندرونی وائرنگ کو کامیابی کے ساتھ تعینات کرنے کی اہلیت دیتی ہے۔مزید برآں انہیں توانائی کی کھپت کا حساب لگانے کی تربیت بھی دی گئی ہے جس کا

 

استعمال اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کیا جا سکتا ہے کہ گھروں کے اندر بجلی کی فراہمی محفوظ اور قابل بھروسہ ہے ۔ انہیں ان کمیونٹیز تک سے رسائی حاصل ہے جہاں کام کے اوقات کے دوران گھروں میں زیادہ تر خواتین ہوتی ہیں۔ ہمارے دن کے اوقات میں گھر میں بجلی استعمال کرنے والوں میں تقریباً 50% خواتین ہوتی ہیں۔10 نومبر 2021 پہلی روشنی باجی ویمن ایمبیسیڈر پروگرام کی شاندار کامیابی کے بعد K-Electric نے کراچی کے

 

مختلف علاقوں سے 60 خواتین پر مشتمل اپنے دوسرے گروپ کا آغاز کیا۔ یہ قدم نچلی سطح پر سرمایہ کاری اور تعاون کے ذریعے اپنی کمیونٹیز کی ترقی اور رہائشیوں کو بااختیار بنانے کا کے ای کا عزم ہے۔سوسائٹی کی ترقی کے لئے اس طرح کے اقدام بہت خوش آئند ہیں ۔ سب سے اچھی بات یہ پروگرام بالخصوص پسماندہ علاقوں کے لئے شروع کیا گیا ہے۔ ہم تہہ دل سے K-Electric کے اس پہل کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں امید ہے مستقبل

 

میں بھی یہ معاشرے کی فلاح و بہبود کے لئے اسی طرح کوشاں رہیں گے۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button